پاکستانی معروف کامیڈین طارق ٹیڈی طویل علالت کے بعد انتقال کرگئے

تھیٹر کی دنیا میں لوگوں کے چہروں پر مسکراہٹیں بکھیرنے والے معروف کامیڈین طارق ٹیڈی 19 نومبر 2022ء کو لاہور میں جگر کے عارضہ کے باعث دنیائے فانی سے کوچ کرگئے. طارق ٹیڈی کی حالت اس وقت خراب ہوئی تھی جب وہ مال روڈ پر تھیٹر میں رات گئے ڈراما پرفارم کر رہے تھے جس پر انہیں فوری طور پر ہسپتال لے جایا گیا جہاں ڈاکٹرز نے اس کی حالت کو دیکھتے ہوئے آئی سی یو وارڈ میں شفٹ کیا تھا۔
طارق ٹیڈی کی عمر صرف 46 برس تھی اور وہ جگر کے عارضے میں مبتلا اور کچھ عرصے سے اسپتال میں زیر علاج تھے۔
طارق ٹیڈی فیصل آباد، پاکستان سے تعلق رکھنے والے پاکستانی سٹیج کے ایک معروف مزاحیہ اداکار تھے۔وہ 12 اگست 1976ء کو فیصل آباد میں پیدا ہوئے۔
طارق ٹیڈی نے 1990ء میں فنی سفر کا آغاز کیا، اسٹیج کے متعدد ڈراموں اور پنجابی فلموں میں اپنی اداکاری کے جوہر دکھائے تھے۔ ان کی کامیڈی کو عوامی سطح پر پذیرائی حاصل تھی۔ انہوں نے اپنے برجستہ جملوں کی ادائیگی کے ساتھ تاثرات کا ایسا استعمال کیا کہ سننے اور دیکھنے والا ہنسے بغیر نہ رہ سکا۔
طارق ٹیڈی کے مشہور ڈراموں میں چا لاک طوطے (تین حصوں پر مشتمل)، ماما پاکستانی، سب کہو بارہ روپیہ، ربا عشق نا ہووے، حسن میری مجبوری، جی کردا، اصلی طائی نقلی جھوٹ بولدا، مرچ مسالہ، گھونگھٹ اٹھا لوں، عید دا چن، ابھی تو میں جوان ہوں، کریزی، مٹھیاں شرارتاں، خوش آمدید اور دوستی شامل ہیں۔ وہ 2004ء میں فلم سلاخیں میں بھی نظر آئے۔
طارق ٹیڈی نے سوگواران میں،،بیٹا جنید اور دو بیٹیاں صفا اور مروا کو چھوڑا ہے۔

Add new comment

5 + 12 =