دنیا کی معمر ترین فرانسیسی راہبہ، 118 سال کی عمر میں ابدی نیند سو گئیں۔

مورخہ 18جنوری2023کو دنیا کی معمر ترین شخصیت فرانسیسی راہبہ سسٹر آندرے 118 سال کی عمر میں اپنے خالق حقیقی سے جا ملیں۔
جیرونٹولوجی ریسرچ گروپ کی ورلڈ سپرسینٹیرینین رینکنگ لسٹ کے مطابق وہ دنیا کی سب سے عمر رسیدہ خاتون تھیں۔ سسٹر آندرے 11 فروری 1904 (پہلی جنگ عظیم سے دس سال قبل) کوفرانس میں پیدا ہوئیں۔وہ اْنیس سال کی عمر میں کیتھولک ہوئیں اور ڈاٹرزآف چیرٹی کی جماعت میں شمولیت اختیار کی، جسے سینٹ ونسنٹ ڈی پال کی سسٹرز آف چیرٹی بھی کہا جاتا ہے۔ 
انہوں نے 28 سال تک وسطی فرانس کے علاقے میں واقع ہسپتال میں یتیموں اور بزرگوں کی خدمت کی۔ کچھ عرصہ بعدوہ جنوب مشرقی فرانس میں واقع ایک اور ہسپتال میں خدمات انجام دینے کے لیے شفٹ ہوگئیں۔پھر 1979 میں 75 سال کی عمر میں ریٹائر ہوگئیں اور بزرگ شہریوں کے لیے فرانسیسی رہائشی نگہداشت میں 30 سال رہیں۔25 اکتوبر 2009 کو بحیرہ روم میں واقع اولڈ ہاؤس منتقل ہو گئی۔ 2010 میں اپنی بینائی سے محروم ہو گئیں تو زندگی کے باقی دن وہیل چیئر پر گزارے۔ وہ ہمیشہ اولڈ ہاؤس میں دوسرے رہائشیوں کی دیکھ بھال کرتی تھی، حالانکہ وہ اب دیکھ نہیں سکتی تھی۔
وہ صحت کے دو عالمی بحرانوں سے بچ گئی - 1918 میں ہسپانوی فلو اور 2021 میں کوویڈ 19 سے متاثر ہوئی اور تین ہفتوں کے بعد صحت یاب ہو گئی۔ گنیز ورلڈ ریکارڈ کے بیان کے مطابق، وہ 2021 میں 117 سال کی عمر میں کوویڈ 19 کی سب سے عمر رسیدہ زندہ بچ جانے والی خاتون کے طور پر تصدیق شدہ تھیں۔اْن کی زندگی میں پوپ فرانسس دسویں پوپ ہیں۔

Add new comment

8 + 3 =